بہت جلد گلوکاری کے میدان میں دوبارہ آؤنگی. شکیلہ ناز

پاکستان فن فنکار

ویب ڈیسک:
معصوم نقش ونگار اور سریلی اواز کی مالک پشتوگلوکارہ شکیلہ ناز نے ایک انٹرویو میں فن سے اپنی محبت کا اظہارکرتے ہوئے کہا ہے کہ گزشتہ اٹھائیس سال سے اسنے اپنے چاہنے والوں کے لئے کوئی گانا نہیں گایا لیکن اسکا مطلب یہ نہیں کہ وہ اپنے پرستاروں اور میوزک انڈسٹری میں اپنے ساتھیوں اور دوستوں کو بھول چکی ہے.




وائیس اف امریکہ پشتو سروس کے ساتھ انٹرویو میں شکیلہ ناز نےایک سوال کے جواب میں کہا کہ میں ایک پشتون قوم پرست زھنیت کی مالک ہوں اور جب گاتی تھی تب پشتون قوم پرست سیاست میں اہم کردار اداء کرتی تھی اور کوشش کرتی تھی کہ اپنی قوم کے لئے کچھ نہ کچھ کرسکوں. اج کل وہ پشتون قوم پرست سیاست دانوں اور جماعتوں کے کردار سے مطمئن نہیں اور سمجھتی ہے کہ موجودہ پر اشوب دور میں بہترکردار اداء کیا جاسکتا تھا جو بدقسمتی سے نہیں ہورہا ہے.
شکیلہ ناز البتہ پشتون تحفظ مومنٹ کے سرگرمیوں سے پرامید ہے اور چاہتی ہے کہ پشتون قوم اس تحریک کے پھیچے کھڑے ہوکر اپنے حقوق کو حاصل کرسکتے ہیں.




شکیلہ ناز نے مزید کہا کہ "گزشتہ اٹھائیس سال کے دوران جب وہ فن موسیقی سے دوررہی، اسکے متعلق کئے افواہیں زیر گردش رہی. کسی نے اسکے قتل ، کسی نے اغواء اور کسی نے گلوکاری سے توبہ تائب ہونے کی من گھڑت خبریں عوام الناس اور سوشل میڈیا میں چلوائیں جس میں کوئی حقیقت نہیں. میں اپنے فیملی کے ساتھ خاموش اور خوش وخرم زندگی گزاررہی ہوں”.
وہ اب بھی موسیقی سے شغف رکھتی ہے، اب بھی گانے گاتے ہے اور موسیقی سنتی ہے، فرق صرف یہ ہے یہ سب کچھ اسی عرصے کے دوران انکی ذات تک محدود رہے.
شکیلہ ناز نے اس بات کا امکان مسترد نہیں کیا کہ وہ دوبارہ بھی اپنے چاہنے والوں کے لئے گاسکتی ہے.

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے