ایشیا کرکٹ کپ. بھارتی ٹیم نے پاکستانی ٹیم کو شکست دے دی. وجوہات

پاکستان کھیل

ایشیا کرکٹ کپ. بھارتی ٹیم نے پاکستانی ٹیم کو شکست دے دی:

اس مکمل رپورٹ کو پڑھنے سے پہلے یاد رہے کہ اج کا میچ ایک ایسے وقت کھیلا جارہا تھا جب دونوں ملکوں کے درمیان سیاسی اور فوجی سطح پر شدید تناؤ موجود ہے اور پاکستانی قوم بجاطور پر امید کررہی تھی کہ اج کا میچ جیت کر انکا مورال بلند ہو. لیکن افسوس ایسا نہ ہوسکا.

ناقص بیٹنگ کے بعد شرمناک فیلڈنگ اور بے ضرر باؤلنگ نے پاکستان کو ایک ہی ایونٹ میں ایک ہفتے کے اندر بھارت کے ہاتھوں دوسری شکست سے دوچار کردیا.

اج کا میچ یوں سمجھئے پاکستانی کھلاڑیوں نے پلیٹ میں رکھ کر بھارت کو پیش کرکے پاکستان شائقین اور قوم کو ایک بار پھر مایوس کرنے کی روایت جاری رکھی.

بھارتی کھلاڑی افغانستان اور بنگلادیش کے خلاف اتنے اسانی سے شائد نہ جیت سکے جتنی اسانی سے اج پاکستانی ٹیم کو اؤٹ کلاس کرکے فتح اپنی نام کردی.

اج سپر فور راؤنڈ میں پاکستان اور روایتی حریف بھارت کے درمیاں مقابلہ ہوا جس میں ایک بار پھر بھارتی ٹیم نے پاکستانی ٹیم کی کمزوریوں سے بھرپور طریقے سے فائدہ اُٹھا کر 9 وکٹوں سے کامیابی حاصل کی.

پاکستان نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا تھا اور مقررہ پچاس اوورز میں 7 وکٹوں کے نقصان پر 237 رنز بنائے.

پاکستان ک طرف سے سینئر تجربہ کار بلے باز شعیب ملک نے زمہ دار بیٹنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے 90 گیندوں پر 2 چھکوں اور 4 چوکوں کی مدد سے 78 رنز بنائے.

کپتان سرفراز احمد نے 44 اور فخر الزمان نے 31 رنز سکور کئے جبکہ آصف علی نے 30 رنز بناکر ٹیم کا مجموعہ ترتیب دینے میں بھرپور مدد کی.


پاکستان کے 237 کے جواب میں بھارت اوپنرز نے شاندار بلے بازی کا مظاہرہ کیا. پاکستانی فیلڈز نے دونوں کے کیچز ڈراپ کرکے انہیں پورا موقع دیا کہ وہ کھل کر کھیل اپنی ٹیم کو کامیابی سے ہمکنار کردے.

بھارت ٹیم نے مطلوبہ ہدف 39.2 اووز میں صرف ایک وکٹ کی نقصان پر پورا کیا . شیکر دھون نے شاندار بلے بازی کا مظاہرہ کرتے ہوئے 114 رنز بناکر حسن علی کی گیند پر شعیب ملک کے ہاتھوں رن اؤٹ ہوئے.

دوسری طرف ساتھی اوپنر روہیت شرما نے 112 رنز بناکر کسی سےپیچھے نہ رہے اور بطور ناٹ اؤٹ بلے باز فتح کا جشن مناتے رہے.

دونوں بھارتی اوپنرز اتنی اسانی سے رنز بٹوررہے تھے کہ کسی بھی موقع پر نہیں لگ رہا تھا کہ انکا سامنا کسی بین القوامی ٹیم سے ہے بلکہ کلب لیول کی باؤلنگ لائن کو اتنا اسان نہیں لیا جاتاکیونکہ دونوں اوپنرز گراونڈ کے ہر طرف اپنی مرضی سے گیند کھیل کر اسانی سے رنز بنانے میں مگن رہے.

المختصر پاکستانی کرکٹ ٹیم اج ایک بار پھر بھارت کے مقابلے میں باؤلنگ، بیٹنگ اور فیلڈنگ تینوں شعبوں میں مکمل طور پر فلاپ ہوگئی اور شائقین کرکٹ کے حصے میں بدستور مایوسی ائی.

اج کے میچ میں کامیابی کے ساتھ بھارتی ٹیم اس ایونٹ کی فائنل میں پہنچ چکی ہے.

اہم درخواست:
اپ کے خیال میں پاکستان کرکٹ ٹیم کی ناقص کارکردگی کے کیا وجوہات ہیں؟؟ کمنٹس سیکشن میں ضرور اپنی رائے کا اظہار کریں. شکریہ


مزید پڑھئے.


جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے