سینٹ انتخابات میں لیگ کی شکست کی وجوھات سامنے اگئے

پاکستان

اسلام اباد( ویب ڈیسک).
حکمران جماعت مسلم لیگ نے کے زرائع نے دعوی کیا ہے کہ انہوں نے سینٹ انتخابات میں ووٹ نہ دینے پانچ اراکین کا پتہ لگا دیا ہے اور باقی دو افراد کے بارے میں بہت جلد حقائق سامنے ائینگے.
جیونیوز کے پروگرام اج شاہزیب خانزادہ کے میزبان نے مسلم لیگ ن کے زرائع کے حوالے اپنے اج کے پروگرام میں بتایا کہ جمیعت العلماء اسلام فضل الرحمان گرووپ کے تین سینٹرز نے ن لیگی امیدواروں کو ووٹ نہیں کیا.
مسلم لیگ ن کے بلوچستان سے خاتون سینٹر کلثوم پروین نے دونوں امیدواروں (راجہ ظفرالحق اور عثمان کاکڑ) کو ووٹ نہیں دیا جبکہ امیر مقام کے ہاتھوں ن لیگ میں شامل ہونے والے ، پارٹی قائد نواز شریف کے ساتھ ملاقاتیں کرنے اوریقین دھانی کروانے والے مرزا افریدی نے بھی پارٹی لائن کے مطابق راجہ ظفرالحق اور عثمان کاکڑ کو ووٹ نہیں دیا.
جمیعت العلماء اسلام (ف ) کے تین سینٹرز طلحہ محمود، مولانا عطاءالرحمان، اور مولوی فیض محمد نے حکمران اتحاد کے ساتھ دھوکہ کیاجسکی وجہ سے گزشتہ روز ہونے والے سینیٹ چیئرمین اور ڈپٹی چیئرمین کے انتخابات میں حکمران جماعت کو زلت امیز شکست ہوئی.
پروگرام کے دوران مولانا فضل الرحمان کے بھائی عطاءالرحمان نے لیگی زرائع کے دعووں کو مکمل طور مسترد کرتے ہوئے کہا ہمارے جماعت کے اراکین نے وعدے کے مطابق اپنے نامزد امیدواروں کوووٹ دیا ہے تاہم ن لیگ اپنے معلومات اور تحقیقات کے حوالے سے مکمل طور پر قائل ہے. ا

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے